ملیحہ لودھی کی فلسطین میں غیرقانونی اسرائیلی بستیوں کی تعمیر پر شدید تنقید


فلسطینی عوام پچاس سال بعد بھی آزادی کے ساتھ زندگی گزارنے سے محروم ہیں، ملیحہ لودھی:فوٹو: فائل

فلسطینی عوام پچاس سال بعد بھی آزادی کے ساتھ زندگی گزارنے سے محروم ہیں، ملیحہ لودھی:فوٹو: فائل

نیو یارک: اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب ڈاکٹرملیحہ لودھی نے مقبوضہ فلسطین میں اسرائیل کی غیر قانونی بستیوں کی تعمیر کی پالیسیوں پرشدید تنقید کی۔

اقوام متحدہ میں پاکستان کی مستقل مندوب ڈاکٹرملیحہ لودھی نے مشرق وسطی پرسلامتی کونسل کے مباحثے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ فلسطین کے مسئلے کا حل عالمی امن اورسلامتی کے لئے لازمی ہے، فلسطینی مسئلہ پرپیشرفت کی کمی نے نہ صرف فلسطینیوں کی نسلوں کی امیدوں اورخواہشات کودھوکہ دیا بلکہ لامتناہی دشمنی کے بیج کوبھی بودیا ہے، 1967 ء سے پہلے کی سرحدوں اور القدس الشریف دارالحکومت کے طورپرہی ریاست مشرق وسطی میں پائیدار امن کی ضمانت ہے، ریاست پرغیرقانونی قبضے کو 50 سال بیت چکے اور فلسطینی عوام آزادی اور وقار کے ساتھ زندگی گزارنے کی خواہش سے محروم ہیں۔

ملیحہ لودھی نے کہا کہ پاکستان نے گزشتہ ہفتے قاہرہ میں فتح اورحماس کے درمیان سیاسی مفاہمت کا تاریخی کامیابی کے طور پرخیرمقدم کیا، پہلے قدم کے طورپر غزہ سے غیر قانونی اور ظالمانہ محاصرہ کو اٹھایا جانا چاہیے۔

ملیحہ لودھی نے مقبوضہ علاقوں میں اسرائیل کی غیر قانونی بستیوں کی تعمیر کی پالیسوں پرشدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ غیر قانونی بستیوں کی تعمیرفلسطینی باشندوں کو ان کے گھروں اور زمینوں سے بے دخل کرنے کی کوشش ہے،جسے روکا جائے، اسرائیل کی جانب سے ایسی کوئی کوشش بھی دنیا بھر کے اربوں مسلمانوں کے لئے ناقابل قبول ہوگی۔



Source link